+(92)305 9265985 +(92) 0300 8040571
books4buy info@books4buy.com

Blog Post

Loh e Mehfooz aur Rooh ki Haqiqat


لوح محفوظ
* یہ امام مبین ہے۔ لوح محو ہے اور اثبات ہے۔
* یہ مقام ولی اور نبی کو ملاتا ہے۔ یہی عالم محفوظ ہے اثبات کرنے والا
( ام الکتاب)
* یہ مقام زمرد سے نبی دو رخی تختی ہے۔ جس پر قیامت تک ہونے والے
واقعات درج ہیں۔
* یہی لوح محصور ہے ۔ اسی پر ملائکہ تسخیر ڈیرہ ڈالے بیٹھے ہیں۔
* اس کی مثال تیرے ایمان کی طرح ہے۔
* لوح میں احوال کا زمان و مکان، اوضاع اور اعراض متنوع ہونا پایا جاتا
ہے۔
* ہمیشہ پچھلا پہلے کو منسوخ کرتا ہے۔ یا پہلے کی نقل کرتا ہے۔ یہی تو محو (مٹانا) اور اثبات لکھنا ہے۔ پس جب یہ اپنے جیسے کی طرف لوٹتے ہیں تو قلم اعلیٰ میں جمع کیے جاتے ہیں۔ وہاں سے یہ بلند آسمانوں کی طرف اوپر اٹھتے ہیں۔ تو نبی اور عالم وارث، قلم اعلیٰ سے نکلتا ہے اور القا مختلف ہوتا ہے۔کیونکہ نیک قلم کی دو نوکیں یا قطہ ہیں اور ولی کے قلم کی ایک نوک ہے اور عا رف اور مومن ولی لوح سے نکلتا ہے تو مراتب نمایاں ہوتے ہیں۔ واللہ عالم بالثواب

روح کی حقیقت
شیخ الاکبرؓ روح کے بارے میں کتاب المعرفتہ میں فرماتے ہیں: ’’جان لے کہ روح اپنے جوہر اپنے تجرد اور عالم ارواح میں ہونے کی وجہ سے جسم سے الگ اپنی ذات سے قائم (چیز ) ہے جو اپنی بقا اور قیام کے لئے جسم کی محتاج نہیں۔ اس کا جسم سے اس کی تدبیر کے واسطے سے تعلق ہے اور چونکہ جسم اس کی صورت، اس کے کمالات کا مظہر اور عالم شہادت میں اس کی قوت ہے، تو یہ اس کی محتاج ہے، اس سے الگ نہیں، اس میں سرائیت کیے ہوئے ہے۔ اس جنس روح کی نو اقسام ہیں۔‘‘
۱۔روح کلیہ:
جو تمام کائنات کا نظام اس کی کلیات اور اس کی جزیات کو اٹھائے ہوئے ہے۔ اسے روح طبیعیتہ الفاعلۃ المنفعلۃ بھی کہتے ہیں۔
۲۔ روح معدن:۔
اسے (خاصہ) خاصیت کہتے ہیں جو مادہ ، نباتات، حیوانات اور انسانوں
کے لئے ہے۔
۳۔ ہر نوع سے مخصوص روح کلیہ۔ افراد میں سے ہر فرد ایسے خواص کا حامل ہوتا ہے جن سے وہ دوسروں سے جدا ہوتا ہے۔
۴) روح نبات:۔یہ نفس نامیہ ہے۔ جس سے اس کا حیوان اور انسان کا بڑھنا (نمو) ہے۔
۵) روح حیات:۔ اسے روح حیات کہتے ہیں۔ اسی سے احساس اور حرکت ہے ، یہ انسان اور حیوان میں ہوتی ہے۔ اسی سے حیوانات حرکت کرتے ہیں اور پانچ حصوں سے محسوس کرتے ہیں۔ یہ روح نباتات اور معدنیات میں نہیں ہوتی۔
۶۔ روح انسانی:۔ یہ نفس حیات ہے جو اپنے احساس اور حرکات میں مکمل ہے۔ اس کے لئے اوصاف حیات ہیں۔ جیسے کہ محبت، بغض، رضامندی، ناراضگی، عدل، ظلم، کراہیت، شہوت وغیرہ۔
۷۔ نفس ناطقہ اور نفس حیات کے درمیان روح:۔ یہ اچھے اخلاق اور برے اخلاق سے متصف ہے جو حیوانات، نباتات اور معدنیات میں نہیں ہوتے۔
۸۔ نفس ناطقہ اور انسان سے مخصوص روح:۔ یہ صرف انسان میں پائی جاتی ہے۔ یہ ایک زندہ ادراک رکھنے والا، بعض غیب چیزوں کو محسوس کرنے والا جوہر ہے اس کے ساتھ باطنی دماغ کے خواص ہیں اور پانچ ظاہر قلبی خواص ہیں۔
۹۔ روح الاارواح:۔ اسے عقل انسانی، جو ہر مفارق، فیض الٰہی قبول کرنے والی کہتے ہیں۔ یہ جسم کے مر جانے سے نہیں مرتی۔ ( کتاب المعرفۃ، ابن عربؓ)
المومن مرآۃ المومن:۔
شیخ اکبرؓ یہ حدیث (المومن مرآۃ اخیہ) مومن اپنے بھائی کا آئینہ ہے حضرت پیران پیر غوث الااعظم شیخ عبدالقادر جیلانی ؒ ، سرالاسرار، میں ( المومن مرآۃ المومن) مومن المومن کا آئینہ ہے۔ پہلے لفظ مومن سے مراد صاحب ایمان شخص ہے جبکہ دوسرے لفظ المومن سے ذات الہیہ مراد ہے۔ اللہ کا ارشاد ہے:
ھو اللہ الذی الا لہ الا ہو الملک القدوس والسلام والمومن الموھیمن العزیز والجبار والمتکبر( الحشر: ۲۳)
پس حدیث شریف کا مفہوم واضح ہے اور شیخ اکبرؓ بھی یہی ثابت کر رہے ہیں کہ یہ مومن اس المومن کی صورت پر ہے۔ اس لئے یہ آئینہ حق ہے۔

یہ انتساب پیر اعجاز حسین جلوی کی اعجاز سے پوسٹ کیا جا رہا ہے۔ جملہ حقوق محفوظ ہے۔

ایڈمن :۔ بکس فار بائے
اسلامک ، تصوف، تفسیر، فقہ ، تاریخ نیز ہر موضوع کی کتب کی رسائی اب آپ کی پہنچ میں آپ صرف کتاب کا نام ، مصنف کا نام، اپنا نام پتہ موبائل نمبر لکھ کرہمیں وٹس اپ یا ان باکس کریں۔ اور کیش آن ڈلیوری کتاب حاصل کریں۔۔۔۔۔۔۔۔۔
92 0305 9265985

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Related Posts

Wazu Nimaze Salook Ramooz e Tasawaf 03

زیر طبع کتاب : رموز تصوف مرتبہ صاحبزادہ محمد اعجاز حسین جلوی ابن پیر

Marfat Rabbani in urdu

First of all thanks for landing this article, if you are searching for Marfat

Ramooz e Tasawaf Peer Ijaz Hussain Jalvi 01

زیر طبع کتاب : رموز تصوف مرتبہ صاحبزادہ محمد اعجاز حسین جلوی ابن پیر